فقیراعظم بمقابلہ #ایٹمی-فقیر#

آج کے دن کا ٹاپ ٹرینڈ ‘#فقیراعظم’ بظاھرن لیگی میڈیا سیل کی ‘تخلیقی’ صلاحیتوں کا اظہار ھے مگر عمران خان کو مختلف ‘القبات’ سے نوازنے والوں کے لیے پیش ھیں کچھ زمینی حقائق۔

  1998 میں  سعودی عرب نے اس وقت بھی پاکستان کو تین ارب ڈالر سالانہ کا تیل ادھار دینا شروع کیا تھا۔ اسی طرح 2014 میں پاکستان غیر ملکی ادائیگیوں کے توازن کو برقرار رکھنے کے لیے پاکستان کو زر مبادلہ کی ضرورت تھی۔ اس وقت سعودی عرب نے ڈیڑھ ارب ڈالر کیش پاکستان کو دیے تھے جسے زرمبادلہ کے ذخائر بہتر بنانے کے لیے استعمال کیا گیا تھا۔

بی بی سی اردو

  1998 میں سعودی عرب کی جانب سے ادھار تیل کا سلسلہ کئی برس جاری رہا تھا۔ ایٹمی دھماکوں کے نتیجے میں لگنے والی اعلانیہ اور غیر اعلانیہ پابندیوں کی وجہ سے سعودی عرب نے امریکی غیض و غضب سے بچنے کے لیے اسے ’ادھار‘ پر تیل دینے کا معاہدہ قرار دیا تھا لیکن دراصل یہ مفت تیل تھا جس کے پیسے پاکستان نے کبھی واپس نہیں کیے۔ اسی طرح 2014 میں سعودی عرب سے ملنے والے ڈیڑھ ارب ڈالر میں سے آدھی رقم کو ’گرانٹ‘ قرار دے دیا گیا تھا۔ لیکن قرائن یہی بتاتے ہیں کہ پاکستان نے باقی کی رقم بھی ادا نہیں کی تھی۔ اس بار بھی یہی کچھ ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔

بی بی سی اردو

جبکہ حالیہ سعودی قرضوں پر پیش خدمت ھے عوام کی رائے

بقول عمران خان کے جو ملک بھیک مانگتا ہے وہ دنیا میں اکیلا رہ جاتا ہے یعنی آج سعودیہ کے دورے کے بعد ہم اکیلے رہ گئے ؟؟ 😎

Ishtiaq Ahmad ‏

ہمارا سب سےبڑا مسلہ کہ ہم حق بات کہنےوالوں کو ملک دشمن اور ذاتی مفاد کی خاطر ظلم کرنے والوں کو محب وطن کہتےہیں۔ ملک میں امن اور خوشحالی کیلیےذاتی مفاد سے نکل کر حق اور سچ کا ساتھ دیناہوگا ورنہ اسی طرح چند لوگوں کی عیاشیاں اور باقی ملک میں عربت اور بدامنی ہوگی

ن کا جنون

سوچنے کی بات یہ ہے نواز حکومت کو سعودیہ کیوں امداد نہیں دیتی تھی؟؟😂😂

Waqas Zeb

سعودی عرب نےدوستی کاحق ادا کردیا پاکستان کی معشیت کونئی زندگی دے دی۔👏👏👏

Hussain Lover Gujrat

کیا منافق میڈیا ہے جو CPEC کو قرضہ کہتا رہا اور اس پہ شور ڈالتا رہا اور آج ایک قرضے کو بڑی کامیابی قرار دے دیا۔ اب خان صاحب کا اس کامیابی پہ قوم سے خطاب تو بنتا ہے۔

Engr M.Alam Sharif ‏

 

Your Opinion is Valuable

Popular Posts