Main Amer’s Dunya media group sacks over 100 journalists in the face of Imran Khan’s bad economic policies

Main Amir's Dunya media group sacks over 100 journalists in the face of Imran Khan's bad economic policies

By Nazim Malik

Yet another over 100 employees mostly journalists from Dunya media group of Mian Amer have been sacked.

This shameful act of firing journalists in thousands has been begun since the PTI government came to power to a year ago.

Ad

Mian Amer who made billions of rupees through his Punjab group of colleges took no shame in making hundreds of employees jobless.

The journalist bodies have reduced itself to the role of condemning this anti workers act but practically they never did something that hurt the interests of the media owners.

Ad

It is high time that journalists should surround the residences and offices of media owners forcing them to take back their decision.

The sacked journalists should stage sit-in of at least 126 days like their one time favourite Imran Khan whom they cursing for their fate to press the owners to stop their economic murder. It’s time to rise against the media owners. Pak Destiny

صحافیوں کے معاشی قتل کے خلاف تمام صحافتی تنظیموں کا اجلاس

دنیا نیوز اور دیگر میڈیا ہاﺅسز سے صحافیوں کی جبری برطرفیوں اور معاشی قتل کے خلاف تمام صحافتی تنظیموں کا اجلاس لاہور پریس کلب میں منعقد ہوا جس میں پریس کلب کے صدر ارشدانصاری نے خصوصی طور پر ٹیلی فونک شرکت کی۔ اجلاس میں پی ایف یو جے کے سیکرٹری جنرل رانا محمد عظیم ، پی یو جے کے صدور شہزاد حسین بٹ، نعیم حنیف، پریس کلب کی نائب صدر ناصرہ عتیق، جوائنٹ سیکرٹری حافظ فیض احمد، نائب صدر پی یو جے عامر سہیل، ایمرا کے صدر آصف بٹ، سیکرٹری سلیم شیخ، لاہور فوٹو جرنلسٹس ایسوسی ایشن کے سیکرٹری پرویز الطاف ، اینکا کے صدر اقبال ملک، سیکرٹری ندیم قاسم، پریس کلب کی گورننگ باڈی ممبران عمران شیخ، شاہد چوہدری سمیت سینئر صحافیوں نے شرکت کی۔ اجلاس میں دنیا نیوز سے درجنوں ورکرز کی جبری برطرفیوں پر شدید تشویش کا اظہار کیا گیا اور متفقہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ صحافیوں کا معاشی قتل کسی طور قبول نہیں کیا جائے گااور تمام ورکرز کی بحالی تک کسی بھی تقریب کی کوریج کے دوران دنیا نیوز کا بائیکاٹ کرکے لوگو نہیں لگنے دیا جائے گا، دنیا نیوز، پریس کلب اور مال روڈ پر دنیا نیوز کے خلاف احتجاجی بینرز آویزاں کئے جائیں گے، چند روز میں صحافیوں کے معاشی قتل کے خلاف بھرپور احتجاج کیا جائے گاجبکہ قانونی مشاورت کے بعد قانونی چارہ جوئی بھی کی جائے گی، اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ دنیا نیوز اور دیگر میڈیا ہاﺅسز کی بربریت کے خلاف اے پی این ایس اور پی بی اے کو احتجاجی خطوط بھی لکھے جائیں گے۔

حافظ فیض احمد
جوائنٹ سیکرٹری ، لاہور پریس کلب

Ad

4 Comments

  1. Ali Rauf Khan Reply
  2. Ahmad Nadeem Reply
  3. Imran Haider Reply
  4. Abdulhameed Frazi Reply

Leave a Reply

Ad